پاگل۔۔۔۔۔۔از۔۔۔۔ظہور حسین

Spread the love

پاگل

دفع ہو جا۔مت بیٹھ یہاں۔بے وفا ہے۔دھوکہ۔دھوکہ۔دھوکہ۔دھوکہ۔فریب دفع دور۔ماروں گا۔دھم۔مارو اس بے غیرت کو۔بے غیرت،کمینے۔دفع دور۔دور۔دور۔ضرور۔دور۔بدور۔مفرور۔مضروب۔ددو
دور۔کر دوراسے۔نکل ۔بھاگ یہاں سے ۔دھم۔کُتے ۔کمینے بچ ۔بچ ۔بچ سچ۔ کھچ ۔کھچ۔سچ ۔بچ ۔سچ۔کچ کچ۔رنڈی ہے۔رنڈی ۔نری رنڈی۔صرف محض رنڈی۔دفع دور۔دھم ۔دھم ۔دھم۔ صاحب معذرت ۔پاگل ہے۔اول فول بکتا ہے ،سب کے ساتھ۔پاگل ہے،معاف کر دو صاحب۔میم جانیں دیں ۔دفعہ کریں ۔دفع۔دفع۔رفع دفع۔ دفع رفع۔پاگل ہے،بولتا ہے،رکتا ہی نہی۔کہ دیتا ہے،بولتا ہے ،سیدھا منہ پے،پاگل ہے،بولتا ہے،بول دیتا ہے،کھول دیتا ہے،کھولتا ہے،سب راز و نیاز،بے نیاز،بے نیاز ہے،ہر شے سے،ہر شے سے ماورا،بولتا ہے ،بکواس کرتا ہے،بکتا ہے ،سچ۔صاف نظر آرہا ہے پاگل ہے۔بولتا ہے،کھولتا ہے۔بولتا ہے،کھولتا ہے۔ہٹ جا پرے۔دور ہو جا،پرے ہو جا،بے وفا ہے، بے حیا ہے،مارو ں گا،بھاگ یہاں سے ،دور دفع دور۔بے وفا ہے ،بے وفا۔صاحب پلیز غصہ تھوک دیں پاگل ہے۔چل نِکل یہاں سے،تو پاگل ہے،نہیں میں پاگل نہی۔تو پاگل ہے،بکتا ہے سب،اُگلتا ہے سب،کہتا ہے سب،پاگل نکل۔صاحب سخت جان ہے ،جان پر بہت نشان ہیں ،بن مانس سا انسان ہے،بکتا ہے،تکتا ہے ،سب اگلتا ہے۔میڈم آپ شانتی سے تشریف رکھئیے،میں آپ کے لئے مشروب بھیجتا ہوں ۔ٹھنڈا مشروب۔گرمی اُف توبہ۔یہاں پر بیٹھئیے۔بہت گرمی ہے،اور میرا سارا میک اپ خراب،لوگ یہاں پر پاگل، جنگل ہے کیا؟سب پاگل ہیں ۔پاگل ہیں تیری زلف و کاکل ولب و ر خسار کے،سرو قد کے،پری پر ہیں کے پاگل ہیں۔شیریں گفتار کے ،تیری رفتار کے،سب پاگل ۔پھر آگیا۔دیکھو۔ مجھے ڈر لگتا ہے،اسے بھگاؤ یہاں سے۔یہ پاگل۔ سب بکتا ہے،سب بولتا ہے سب کچھ کہہ دیتا ہے،سنیئے پولیس کو بلا لو،اس کو دھر لے،اس کو پکڑ لے،سب کہہ دیتا ہے،سب بکتا ہے،سچ بکتا ہے،نہ پی ،نہ پی، یہ مشروب نہیں ،اقبال شعر زقند ‘‘زہر‘‘ یہ بے وفا ہے،تیری نہیں ،میری نہیں ،میری ہے نہیں ،تیری ہے نہیں ،کسی کی ہے نہیں ،کبھی کسی کی ہوئی نہیں ،بس کر!تجھے ایک الف درکار،صرف الف یار۔صرف الف پکار،پکار الف،الف،الف،الف،ب،جیم،د،ہ،س،ش،صرف الف،ب نہیں ،جیم نہیں، د نہیں ،شین نہیں ،صرف الف تیری درکار۔صرف الف پکار۔الف اللہ،الف اللہ،باقی سب مایا ہے،باقی سب بے وفا۔باقی سب غلط۔بس الف،بھگا اسے ،دم دبا کے بھاگ یہاں سے،چل چلیئے دنیا دی اُس نکڑ تے،چل ۔چل۔چل۔بھاگ،لگا بھاگ،بھاگ بھاگ سدا سہاگ۔بھاگ،راگ،بھاگ،نہیں آگ،آگ،چتا،جل،جلتا رہے گا،اور مرتا ہے گا۔دفع ہو،دفع دور۔دفع دور۔اس بلا سے،اس بلا کی بلا سے۔دفع دور۔دور دفع۔رفع دفع۔رفع دفع۔دیکھیئے نہیں رکنا مجھے یہاں ۔پاگل کتے ہیں سب!یہ کون دی نگری ہے۔یہ کیسا چمن ہے،بلبل اور مینا کے بجائے،کتے ہیں۔بھونکتا ہے سب کو،سب کو۔سب کہہ دیتا ہے،سب بکتا ہے،میرے وجود سے کائنات میں شباب رنگ ہے،بو ہے،رنگینی ہے۔آفرینی ہے ،شاعر ہے،غزل ہے،بھنورا ہے،پروانہ ہے،دیوانہ ہے،اپنا ہے ،بیگانہ ہے،سب ہے میرے وجود سے،یہ کہتا ہے، بھونکتا ہے،سب کہتا ہے،سب کچھ بکتا ہے،گارڈ ۔گارڈ۔اس کتے پاگل کو نکالو یہاں سے۔دور کرو۔سب مزا خراب،خرابان زمانہ ہے۔جی۔جی۔میڈم۔یہ سہتا ہے ،کہتا ہے،کہہ دیتا ہے،بھونکتا ہی تو ہے صرف،کبھی کاٹتا نہیں ،کاٹتا ہے صرف اپنے شریر کو،اپنے پیرھن کو،کُتے دفع ہو جا۔دور ۔دور۔ضرور۔جی حضور ۔ضرور۔جی حضور کتا ہے یہ کیا؟سب مایہ ہے ،دیکھ صاحب!دھوکہ ہے ،فریب ہے،بکواس ہے،پیار ویار ،پیارو یار،سب ڈگھونگ سا ہے،ناٹک ہے،پلے ہے،سین ہے،چند سطریں ہیں۔محض چند جملے ہیں۔رٹے رٹائے،سنے سنائے،سب کے لیے،صبح۔ دوپہر ۔شام کے لیئے۔چھوٹے بڑے کے لیے،غریب و امیر کے لیے،نوجوان و بوڑھے کے لیئے،سب کے سب کے ساتھ پیار ہے ،واہ تیرا پیار۔نس جا۔صاحب۔بھاگ جا۔دوڑ جا۔اپنے بھاگ جگا۔سب بکواس۔سب بکواس۔بے وفا ہے۔بے حیا ہے۔صاحب بے وفا،بے وفا ہے،وفا وفا وفا اس وفا میں نا پید۔نا پید ۔ناپید۔شاید۔شاید۔رک جایئے ،پلیز! میں اس پاگل کو بھگاتا ہوں۔پلیز۔آپ نہ جایئں،اس گلستان سے رونق چلی جائے گی۔پلیز!جانِ من،غصہ تھوک دیجئے۔ذرا دھیرج رکھیئے۔میری جان۔رکیئے،ٹھہریئے،میں اس پاگل کو لگاتا ہوں ٹھکانے۔آپ پلیز ،یہاں رہیں میری آنکھوں کے سامنے،ابھی تو کچھ ہوا ہی نہی۔لبوں کو لبوں نے چھوا ہی نہیں ۔نہیں نہیںرک جائیں۔پاگل ہے،سب کہہ دیتا ہے،سب بک دیتا ہے ،سب کچھ۔آپ دیکھیں ،میں بھی پاگل ،تیری زلف کا اسیر،تیری باتوں کے سحر میں اسیر،اسیر محبت،وہ ٹھہرا نکسیر میں نچیز،میں اس نکسیر کو ابھی کاٹ کر پھینکتا ہوں۔آپ نہ جا ئیں یہاں سے ،رنگ ہے ،بو ہے،خوشبو ہے،رنگ ہے چارسو،میری زندگی ہے،توتو میری زندگی ہے،میری زندگی ہے فقط تو،وہ پاگل اللہ ہو!اللہ ہو! میری زندگی ہے فقط تو،وہ پاگل اللہ ہو !اللہ ہو!بس مجھے نہی کچھ درکار،تیرے سوا سب بے کار۔بے کار ۔بے کار۔بے کار۔بے قرار ،بے قرار،تیرے بغیر سب بے قرار،تو قرارِ دل ہے،قرارِ روح ہے،اللہ تیری شان ۔تومیری مان نہ مان۔میری جان اللہ تیری شان۔واہ کیا رنگ ہے ؟کیا خوشبو ہے؟تیرے دم سے ہے شبات،تیری آنکھوں کے سوا رکھا کیا ہے؟اُسے صرف الف درکاروہ پاگل ہے بے کار۔وہ صرف رسنبار ہے تو ہے قدرت کا شاہکار،وہ پاگل بے کار۔بے کار،تو ہی تو ہے ۔سب تو ہے۔الف تو ہے ،ب تو ہے ،س تو ہے ،جیم تو ہے۔ر تو ہے ،س تو ہے،میم تو ہے ،ی تو ہے ،سب تو ہے،وہ پاگل ہے صرف اللہ ہو ہے،اللہ ہو ہے۔دیکھیں بس بس مجھے جانا ہے،مجھے آنا ہے ،مجھے جانا ہے،مجھے پھر جانا ہے،آنا ہے۔جانا ہے،آنا ہے،جانا ہے،صرف تو ہی تو نہیں ہے،وہ بھی ہے،یہ بھی ہے،آپ بھی ہیں ۔تو بھی ہے ،محترم بھی ہے،افسر بھی ہے،جرنیل بھی ہے،جرنل بھی ہے،کرنل بھی ہے کرنیل بھی ہے،سب ہیں۔صرف تو ہی تو نہیں بس۔وہ چلی چلی واہ پگلی تیری گلی میری گلی،دیکھو کلم و کلی،پیار کی ملی ،وہ پاگل ہے وہ کتا سامنے ہی بیٹھا ہے،منہ سے رال ٹپکائے پاگل ہے۔سب کہہ دیتا ہے،سب کہہ دیتا ہے۔بھاگ یہاں سے ،بے وفا ہے ،نہ ٹھہر اس کے پہلو،اس کے پہلو بہت رش ہے،دکھائی دیتا نہیں تجھ کو،اندھا ہے تو ،اندھا،بینائی سے محروم ہے،کچھ دکھتا نہی تیرے کو۔بس ۔ایک شبت آگے نہیں ۔میں چلی یہاں سے ۔پلیز۔رک جائیں ،وہ پاگل ہے۔سب کہہ دیتا۔سب کچھ اگل دیتا ہے،آجا میرے ہمدم آجا۔بہہ جا رنداں دی محفل اچ،آجا،بہہ جا،بہہ جا،میرے ساتھ آجا۔پریم نگر کے جوگی یہاں پر دیرا لگا۔اپنے من کی جوت جگا۔کل جُک نہیں (نظر اکبر اللہ آبادی کی نظم)،یہاں پر اپنی کٹیا بنا۔دھرتی رچا،شنکر بجا،گا،گا،گاگا کے سنا۔طائر طیور بجانے لگے،مست پرندے گانے لگے،ایک نہیں دو پاگل گانے لگے،کہنے لگے،سب سچ اگلتے ،سب سچ،خورشید کی کرنیں ظہور ہوئیں ،چمن میں کلیاں مسرور ہویئں ،بن میں ایک پریم جوڑا رکا۔محبت سے ایک پھول پر جھکا۔پھولوں کی بھنی بھنی ہوائوں میں صفائوں میں ایک پریمی جوڑا مسحور ہوا۔تب اک پاگل کا وہاں ظہور ہوا۔بھاگ یہاں سے ،دفع دور،دفع دور،دفع دور۔بے وفا ہے ۔بے وفا ہے ۔بے وفا ہے۔تجھے صرف ایک الف درکار،باقی سب بے کار،بے کار ،تجھے صرف ایک الف درکار۔

Facebook Comments

31 thoughts on “پاگل۔۔۔۔۔۔از۔۔۔۔ظہور حسین

  1. sir,its a classic piece of writing in urdu which is fraught with meaningful images and open for interpretations…

  2. الف اللہ نوں پھڑ۔۔ صرف اللہ باقی سب مایہ ہے۔۔۔ انتہاٸی منفرد انداز۔۔۔ اردو ادب کا ایک شاہکار۔۔ بہت سے سماجھی اور انفرادی معاملات کو انتہاٸی خوش اسلوبی اور ماہرانہ انداز میں بیان کیا گیا ہے۔۔۔ ایک پاگل ہی ہے جو سب کچھ کہ دیتا ہے۔۔۔ پاگل پاگل کیندی مینوں۔۔ پاگل پاگل ہو گٸی دنیا۔۔۔

  3. Salam.dear Zahoor jis umdagi se app ne Urdu Mein tehreer kiya wo Sahib e Kamal honay Ki nishani hy .Allah kere zor e qalam Aur ziyada.
    Abbas Ali

  4. Dear Zahoor Salam.app ki adab shanasi k hum humesha hi se qail rahy Hein Aur angrezi adab Mein app ka Kamal Nishat Mein perhanay k waqt se hi daikhtay a rahy Hein.Masha Allah bohat khoob likha .urdu Mein app ka likha humari nazar se Nahi guzra tha .ba her haal Aik talkh mozu per Aik naye andaz se ap ne bohat khoob likha.Allah kere zor e qalam Aur ziyada.
    App ka dost
    Abbas Ali

  5. الف اللہ،باقی سب مایا ہے،باقی سب بے وفا۔
    تیری آنکھوں کے سوا رکھا کیا ہے؟

    گزشتہ چند ایام قبل آپ کی اپنی لکھی گئ ایک تحریر “مرد” ذہن میں آگئ- لیکن اس بار آپ کے اس خوبصورت انداز اور منفرد الفاظ کے استعمال نے ہماری ادب سے چاہت کو مزید بڑھایا ہے اور یہی وجہ ہے کہ ادب سے تعلق رکھنے والے آپ کے کام سے خوب متاثر ہوتے ہیں ۔
    اللہ تعالی آپ کو مزید کامیابی و کامرانی عطا فرمائے۔آمین ❤

  6. Its language is not easy to get without dictionary but I’m trying to get it
    Ali Noor sir sa kahaen k language easy select kia karain

  7. Thanks Ali Noor for sharing this you know in these days with fast and summer and vacations it was help ful even this website provided alot of things for me I’m enjoying

  8. Thanks Ali Noor for sharing this with me
    But u was telling me that your teacher is Related with English but they wrote outstanding in urdu

  9. بہت خوب جناب بہت خوب 👌👌👌👌
    شکریہ علی نور اس مواد کو ہم تک پہنچانے کے لیے

  10. I m proud of u sir you are a keen observer of the facts around and the way you write its just outstanding

    Thanks Ali noor for sharing this

  11. Sir i appreciate your keen observation of society’s characters and the way you
    write,its just outstanding

  12. تجھے صرف ایک الف درکار،باقی سب بے کار،بے کار ،تجھے صرف ایک الف درکار۔
    بہت خوبصورت انداز میں ماشرے کی تلخ حقیقت کی عکاسی کی ہے سر جی

  13. I have read it and find all the characters before my eyes, playing their role at some place. It is definitely a new tradition in “Urdu” literature with traditional themes along with life-like characters. The so-called mad-man who is suffering from many external and internal conflicts but truly depicting the realities of women. In the guise of mad man there is too much wise-man, who is acting like an advisor and trying to make the lover aware of disloyalty which he may face from his beloved. This madman is actually like the “Mad Hamlet” from “Hamlet”. It deals with the futility of conflict and attracted both praise and harsh.

  14. Ali noor thanks for sharing this afsana
    Sir zahoor indeed a great person and having a creative art
    Happy to see ur work

  15. Thank u dear Ali noor for this sharing this meterial
    Sir zahoor hussain please write something about saraiki culture im getting this afsana its language is very difficult

  16. Thanks Ali Noor for sharing this informative meterial Sir zahoor u always did creative work keep it up and u r having a factory of afsanas😀😀

  17. Thanks for sharin Noor Ali
    Waoooo great words choice is great please write something about pakistani media role in society

  18. A person related with the field of English department and language but working on urdu thats great sir i never saw the spirit like that keep it up 👌👌

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *